May 17, 2022

آپ کے جو مسائل ہیں وہ کسی اور کی زندگی کی سب سے بڑی خواہش ہیں سوچ بدلو زندگی بدلو


مسائل کس کی لائف میں نہیں ہوتے دنیا میں کوئی ایک بھی ایسا شخص نہیں ملے گا آپ کو ۔آپ کو ساری دنیا گھو م لیں۔ کوئی ایک بھی نہیں ملے گا جس کی لائف میں کوئی مسائل نہ ہو بس خوشیاں ہی خوشیاں ہو۔ کوئی غم نہ ہو۔ ایک آدمی اپنے دوست سے بات کررہا تھا ۔ یار میں تو اپنے بیٹے سے بہت تنگ آگیا ہوں۔ بہت شرارتی ہے ناک میں دم کررکھا ہے۔ ابھی کل ہی نیا موبائل لیا تھا۔ اس نے پانی کے ٹب میں گرادیا ہے۔ بڑا نقصان کردیا ہے اس نے ۔ پتہ نہیں ٹھیک ہوگا یا نہیں۔

اب دونوں دوست اپنے مسائل کو ڈسکس کرر ہے ہیں۔ اور تھوڑے سے فاصلے ایک آدمی کھڑا ان کی باتیں سن رہا ہے ۔اور سوچ رہا ہے۔ کہ کاش اس کا بھی کوئی بیٹا ہوتا اور اس کی اولاد ہوتی اور شرارتیں کرتی اوراسے پریشان کرتیں اور وہ ان کو ڈانٹتا اور ان کو سمجھاتا اور ان سے پیار کرتا۔ دوستو ! اکثر ہماری زندگی میں بہت ایسی چیزیں جنہیں ہم مسائل سمجھتے ہیں ۔ جن سے ہم بڑے پریشان ہوتے ہیں وہ کسی اور کی زندگی کی سب سے بڑی خواہش ہوتی ہے۔ اگر آپ کو گاڑی باہر گلی میں کھڑی کرنی پڑتی ہے۔

کیونکہ آپ کا گھر چھوٹا ہے اس میں گیراج نہیں تو آپ کا خود کا گھر تو ہے ۔ دنیا میں بہت سے لوگ ہیں ۔ جن کی زندگی کی سب سے بڑی خواہش ہے کہ کاش ان کے پاس اپناخود کا گھر ہوتا۔ چاہے چھوٹا سا لیکن اپنا تو ہوتا۔ اگر آپ کی گاڑی گیراج میں کھڑی نہیں ہوسکتی اور آپ اس کو لے کر پریشان ہیں تو آپ کے پاس اپنی گاڑی تو ہے جس کا خواب دیکھتے دیکھتے کئی لوگ اپنی عمر گزار دیتے ہیں۔ ہماری زندگی کی اکثر مسائل جو ہمارے نزدیک مسائل ہوتی ہیں ۔ وہ کسی دوسرے کی زندگی کی سب سے بڑی خواہش ہوتی ہے ۔ تو اگر ایک دوسری نظر سے دیکھا جائے تو جس چیز کو ہم مسئلہ سمجھ رہے ہوتے ہیں ۔

اورکوئی دوسرا رحمت سمجھ کر اسے حاصل کرنے کی دعا مانگ رہا ہوتا ہے۔ آپ کے پاس جو گھر ہے وہ گھر کسی کا خواب ہوگا۔ آپ کے پاس جو جاب ہے ۔ اس جا ب کے لیے کوئی دھکے کھارہا ہوگا ۔ آپ کے پاس جو گاڑی ہے جوبائیک ہے اس کی طرف کوئی حسرت بھری نظروں سے دیکھتا ہوگا۔ تو سوا ل یہ ہے کہ اگر وہ چیز جو کسی دوسرے کی نظر میں رحمت ہے اسے ہم مسئلہ کیوں سمجھتے ہیں ۔ اس لیے جب بھی آپ کولگے کہ آپ کی زندگی میں مسائل بہت بڑھ گئے ہیں۔ مسائل بہت زیادہ ہوگئے ہیں۔

تو ایک بار پھر سے سوچیئے اگر آپ کا گھر چھوٹا ہے اور یہ آپ کے لیے بہت بڑا مسئلہ ہے تو کوئی نہ کوئی جھگی والا، کوئی کرائے والا، کوئی بے گھر آپ جیسے گھر کی تمناء کرتا ہوگا۔ آپ جیسے گھر کا خواب دیکھتا ہوگا۔ اس لیے اپنے گھر کا شکر ادا کریں۔ اور اس سے بڑے گھر کے لیے کوشش ضرور کریں لیکن دل میں شکر گزاری کا جذبہ لے کر۔ اور زندگی میں ہر روز کچھ نیا سیکھو ، نیاسوچو، نیا کرو۔

یہاں کلک کر کے شیئر کریں