May 18, 2022

ان دو قسم کے انسان سے دوستی نہ کرنا


حضرت علی رضی اللہ تعالیٰ عنہ نے فرمایا دو قسم کے انسانوں کی دوستی سے بچو ایک جاہل اور دوسرا وہ عقل مند جو جہالت کی صفت رکھتا ہے تو کسی نے پوچھا یا علی جاہل سے کیا مراد اور اس عقل مند سے کیا مراد جو جہالت کی صفت رکھتا ہے امام علی رضی اللہ تعالیٰ عنہ نے فرمایا جاہل سے مراد وہ انسان جو تمہاری بات سمجھ نہیں سکتا اور عقل مند جاہل سے وہ مراد جو تمہاری بات سمجھنا نہیں چاہتا یاد رکھنا وہ انسان جو تمہاری سوچ نہیں سمجھتا وہ چاہتے نہ چاہتے ہوئے تمہیں نقصان دے بیٹھے گا اور وہ انسان جو تمہاری سوچ سمجھنا نہیں چاہتا وہ قدم قدم پر تمہیں حقیر سمجھے گا اور یوں ان کی دوستی تمہیں تذلیل کی طرف دھکیلے گی اے شخص یا د رکھنا

انسان کا سب سے مخلص دوست وہ ہے جو اس کی سوچ کو سمجھتا ہے اس کی اصلاح کرتا ہے اس کو برے کاموں سے روکتا ہے ۔حضرت حذیفہ بن یمان رضی اللہ عنہ بیان کرتے ہیں کہ حضور نبی اکرم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم ایک دن ہماری نظروں سے اُوجھل رہے، آپ تشریف نہ لائے یہاں تک کہ ہم نے گمان کیا کہ آپ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم آج حجرہ مبارک سے باہر نہ نکلیں گے۔

 جب آپ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم باہر تشریف لائے تو اتنا طویل سجدہ کیا کہ ہم نے سمجھا کہ آپ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم وصال فرما گئے ہیں، پھر آپ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے اپنا سرِ انور اُٹھا کر ارشاد فرمایا: میرے رب تبارک و تعالیٰ نے مجھ سے میری اُمت کے بارے میں مشورہ طلب کیا کہ میں اُن سے کیا معاملہ کروں؟ میں نے عرض کیا: میرے رب! جیسا تو چاہے، وہ تیری مخلوق اور تیرے بندے ہیں۔

اﷲ تعالیٰ نے دوبارہ مجھ سے مشورہ طلب کیا تو میں نے اِسی طرح عرض کیا۔ پس اﷲ ل نے فرمایا: یا محمد (صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم)! میں تجھے تیری اُمت کے بارے غمگین نہیں کروں گا اور اﷲ تعالیٰ نے مجھے خوشخبری سنائی کہ میرے ستر ہزار اُمتی جن میں سے ہر ہزار کے ساتھ ستر (70) ہزار ہوں گے بغیر حساب کے سب سے پہلے جنت میں داخل ہوں گے۔حضرت ابو ہریرہ رضی اللہ عنہ کا بیان ہے کہ میں نے حضور نبی اکرم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کو فرماتے ہوئے سنا: اللہ تعالیٰ نے رحمت کے سو حصے بنائے ہیں جن میں سے اُس نے ننانوے حصے اپنے پاس رکھ لئے اور ایک حصہ زمین پر نازل کیا۔

 ساری مخلوق جو ایک دوسرے پر رحم کرتی ہے یہ اُسی ایک حصے کی وجہ سے ہے، یہاں تک کہ گھوڑا جو اپنے بچے کے اُوپر سے اپنا پاؤں اُٹھاتا ہے کہ کہیں اُسے تکلیف نہ پہنچے وہ بھی اسی ایک حصے کے باعث ہے۔اللہ ہم سب کا حامی وناصر ہو۔آمین

یہاں کلک کر کے شیئر کریں